برطانیہ میں تاریخ اسلام

نو سو سال قبل انگلستان کے بادشاہ اوفاؔ نے اپنے ملک میں پہلا باقاعدہ سکہ رائج کیا۔ سونے سے تیار کیا جانے والا یہ سکہ برٹش میوزیم میں آج بھی موجود ہے جس کے ایک طرف بادشاہ کا نام درج ہے اور دوسری طرف کلمہ طیبہ کندہ ہے۔ امکان ہے کہ درپردہ بادشاہ مسلمان ہو …مزید پڑھیں

’’البدر‘‘ قادیان کا اجراء

1897ء میں حضرت شیخ یعقوب علی عرفانی صاحبؓ نے اخبار ’’الحکم‘‘ امرتسر سے جاری کیا جو اگلے سال قادیان منتقل کردیا گیا۔ 1902ء میں حضرت منشی محمد افضل صاحبؓ جو مشرقی افریقہ میں مقیم تھے، قادیان آئے اور حضرت مسیح موعودؑ کی اجازت سے اخبار ’’القادیان‘‘ جاری کیا جس کا نمونہ کا پرچہ یکم ستمبر …مزید پڑھیں

رسالہ ’’مصباح‘‘ کا اجراء

مستورات کے لئے ’’احمدی خاتون‘‘ نامی رسالہ حضرت شیخ یعقوب علی عرفانی صاحبؓ نے جاری کیا تھا جس کا نام حضرت مصلح موعودؓ نے بدل کر ’’تادیب النساء‘‘ رکھ دیا۔ جب یہ رسالہ بند ہوا تو اخبار ’’الفضل‘‘ میں خواتین کے مضامین شائع ہونے لگے اور ایک صفحہ اس مقصد کے لئے مخصوص کر دیا …مزید پڑھیں

’’الفضل‘‘ کا اجراء

اخبار ’’الفضل‘‘ قادیان کا اجراء 18 و 19؍ جون 1913ء کو ہوا۔ اس وقت یہ حضرت صاحبزادہ مرزا محمود احمد صاحب رضی اللہ عنہ کا ذاتی پرچہ تھا اور وہی اس کے اوّلین ایڈیڑ اور پبلشر تھے۔ انہوں نے اخبار کا نام ’’فضل‘‘ تجویز کر کے حضرت خلیفۃ المسیح الاول رضی اللہ عنہ کی خدمت …مزید پڑھیں

ماہِ اکتوبر کے اہم واقعات

ماہنامہ ’’مصباح‘‘ اکتوبر 1995ء میں ’’اکتوبر کے اہم واقعات‘‘ (مرتبہ مکرمہ صائمہ مریم صاحبہ) شائع ہوئے ہیں جو 1983ء تک کی تاریخ احمدیت سے مرتب کئے گئے ہیں: اخبار’ الحکم‘ کا اجراء 18؍اکتوبر 1897ء کو ہوا اور اخبار ’البدر‘ کا 31؍اکتوبر 1903ء کو۔اخبار ’نور‘ اکتوبر 1909ء میں اور اخبار ’فاروق‘ 7؍اکتوبر 1915ء کو جاری ہوا۔ …مزید پڑھیں

’لالیاں ‘میں جماعت احمدیہ کا قیام

ربوہ سے نو میل کے فاصلہ پر واقعہ قصبہ لالیاں میں احمدیت کے نفوذ کے بارہ میں مکرم ڈاکٹر محمد حیات صاحب کا مضمون ماہنامہ ’’انصاراللہ‘‘ جون 1995ء میں شائع ہوا ہے۔ وہ بیان کرتے ہیں کہ حضرت اقدس مسیح موعود علیہ السلام کے دور میں یہاں کی جامع مسجد کے امام مولوی تاج محمود …مزید پڑھیں

جلسہ سالانہ مستورات کی تاریخ

مستورات کے لئے سالانہ جلسوں کا باقاعدہ آغاز اگرچہ 1914ء سے ہوچکا تھا لیکن خواتین کے جلسہ کا علیحدہ انتظام پہلی بار 1917ء میں کیا گیا اور 1922ء میں پہلی بار لجنہ اماء اللہ کے زیر انتظام جلسہ کی کارروائی منعقد ہوئی۔ 1934ء میں جلسہ سالانہ مستورات کے لئے شعبہ جات کا نظام قائم ہوا …مزید پڑھیں

جماعت احمدیہ کا پہلا جلسہ سالانہ

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 31؍دسمبر 1995ء کا شمارہ سالانہ نمبر ہے اور اس میں شائع ہونے والے ایک مضمون میں جلسہ سالانہ جماعت احمدیہ کے آغاز کی تصویر کشی کی گئی ہے۔ 27؍دسمبر 1891ء کو منعقد ہونے والے پہلے جلسہ سالانہ میں 75 احباب شامل ہوئے جنہیں حضرت مسیح موعود علیہ السلام نے شرفِ مصافحہ بخشااور …مزید پڑھیں

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ کی بندش

1953ء کے دورِ ابتلاء میں جب لاہور سے شائع ہونے والے روزنامہ ’’الفضل‘‘ کو بند کردیا گیا تو الفضل کے مستعد عملہ نے خدام الاحمدیہ کراچی کے ترجمان پندرہ روزہ ’’المصلح‘‘ کے ذریعہ نظام اور افراد کا رابطہ بحال رکھا۔ ’’المصلح‘‘ کے عملہ ادارت( جس میں محترم فیض چنگوی صاحب اور محترم تاثیر احمدی صاحب …مزید پڑھیں

امانات کی قادیان سے ربوہ منتقلی … 1947ء

محترم عزیز احمد صاحب سابق ناظر بیت المال کا مضمون روزنامہ ’’الفضل‘‘ 25؍اکتوبر 1995ء کی زینت ہے جس میں آپ بیان کرتے ہیں صدر انجمن احمدیہ میں بطور امانت رکھوائے گئے زیورات ، دیگر امانات اور ریکارڈ کو قادیان سے بحفاظت پاکستان منتقل کرنے کی توفیق حضرت شیخ فضل احمد صاحب بٹالوی رضی اللہ عنہ …مزید پڑھیں

تعلیم الاسلام کالج ربوہ

محترم پروفیسر حبیب اللہ خان صاحب تعلیم الاسلام کالج ربوہ کی تاریخ بیان کرتے ہوئے روزنامہ ’’الفضل‘‘ 19؍ستمبر 1995ء میں لکھتے ہیں کہ تقسیم ہندوستان کے وقت جب ہمارا کالج لاہور منتقل ہوا تو لاہور کے ایف۔سی کالج کے ہندو اساتذہ وہاں سے جاچکے تھے۔ چنانچہ حضرت مصلح موعودؓ نے اس کالج سے یہ معاہدہ …مزید پڑھیں

سیرالیون میں احمدیت کا نفوذ

سیرالیون میں احمدیت کا نفوذ جماعتی لٹریچر کے ذریعہ سے ہوا اور 1921ء میں حضرت مولانا عبدالرحیم صاحب نیرؓ صحابی حضرت مسیح موعودعلیہ السلام پہلے مبلغ کی حیثیت سے وہاں پہنچے۔ 1937ء میں باقاعدہ مشن حضرت مولانا نذیر احمد علی صاحب کے ذریعہ قائم ہوا اور 1940ء میں محترم مولوی محمد صدیق صاحب امرتسری بھی …مزید پڑھیں

انڈونیشیا میں نفوذ ِاحمدیت

انڈونیشیا میں احمدیت کے نفوذ کے بارے میں محترمہ نور جمیلہ صاحبہ کا ایک خطاب مجلہ ’’النساء‘‘ کینیڈا سہ ماہی اول 1995ء کے انگریزی حصہ میں شائع ہوا ہے۔ موصوفہ جامعہ احمدیہ جکارتہ کی گریجویٹ ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ 1922ء میں انڈونیشیا سے تین نوجوان دینی تعلیم کے حصول کے لئے ہندوستان گئے اور …مزید پڑھیں

خلفائے سلسلہ احمدیہ کی تحریکات

خلفائے کرام سلسلہ عالیہ احمدیہ نے اللہ تعالیٰ کی منشاء اور راہنمائی کے تابع جماعت احمدیہ کے لئے بیسیوں روحانی،تربیتی، علمی اورانتظامی تحریکات جاری فرمائیں جن کے بارہ میں مکرم عبدالسمیع خان صاحب کا ایک مضمون روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ کے سالانہ نمبر 1996ء میں شامل اشاعت ہے۔ خلافت اولیٰ کی تحریکات ٭ دینی مدرسہ کے …مزید پڑھیں

حضرت خلیفۃالمسیح الثالثؒ کی حکمت

دریائے راوی میں تعلیم الاسلام کالج ربوہ اور اسلامیہ کالج لاہور کی ٹیموں کے مابین کشتی رانی کامقابلہ ہونے والاتھا اورطلبہ کی نعرہ بازی کی وجہ سے فضابہت مکدّر ہوچکی تھی۔ ایسے میں اسلامیہ کالج کے پرنسپل نے مائیک پر آکر اعلان کیا کہ اُن کی ٹیم اگر اوّل آئی تو اسے ایک سو روپے …مزید پڑھیں

حضرت خلیفۃالمسیح الثالث کی ماؤں کو نصیحت

سیدنا حضرت خلیفۃ المسیح الثالث رحمہ اللہ تعالیٰ نے جلسہ سالانہ مستورات 1965ء کے موقع پر جو خطاب فرمایا، اُس کا ایک اقتباس ماہنامہ ’’مصباح‘‘ ستمبر 1996ء کی زینت ہے۔ آپؒ نے فرمایا:- ’’ بعض ماحول ایسے بھی دیکھے گئے ہیں جہاں ماں بچے کو کپڑے پہناتے ہوئے دعا کرنے کی بجائے کوسنے دے رہی …مزید پڑھیں

سیدنا حضرت مصلح موعودؓ کی شفقت

حضرت مصلح موعودؓ کی سیرۃ کے حوالہ سے مکرم جمعدار فضل دین صاحب کا بیان روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 29؍اکتوبر 1996ء میں شائع ہوا ہے کہ 1954ء میں ربوہ کی بعض عمارات کی تعمیر کی نگرانی میرے سپرد تھی۔ ان دنوں لوہا کنٹرول ریٹ پر بکتا تھا۔ چنانچہ مجھے دفتر والوں نے آٹھ ہزار روپے دے …مزید پڑھیں

حضرت مصلح موعودؓ کا علم قرآن

حضرت مصلح موعودؓ نے ایک موقعہ پر فرمایا: ’’ضرورت کے وقت ہر علم خدا مجھے سکھاتا ہے اور کوئی شخص نہیں ہے جو مقابلہ میں ٹھہر سکے ‘‘۔ ماہنامہ ’’ خالد‘‘ ربوہ فروری 1997ء میں محترم عبداللہ ولیئم صاحب نے حضرت مصلح موعودؓ کے قرآنی علوم کے حوالہ سے متعدد مثالیں بیان کی ہیں۔ حضورؓ …مزید پڑھیں

اسلام کی حقانیت کا ثبوت

سیدنا حضرت مصلح موعودؓ فرماتے ہیں:- ’’ایک انگریز نے مجھ سے سوال کیا کہ سائنس کی اس قدر ترقی کے باوجود آپ کا خیال ہے کہ اسلام غالب آئے گا ؟ … میں نے جواب دیا مجھے اس کا ایسا ہی یقین ہے جیسا اپنی ہستی کا۔ شملہ کے آریہ سماج کے سیکرڑی صاحب ایک …مزید پڑھیں

حضرت مصلح موعودؓ کی سیاسی بصیرت

حضرت مولانا عبد الغفور صاحب کا ذکر خیر کرتے ہوئے مکرم ملک محمد عبد اللہ صاحب بیان کرتے ہیں کہ حضرت مولانا صاحب کو ریاست چمبہ میں مقرر کیا گیا جہاں کا ہندو راجہ مرگیا تھا اور اس کا نابالغ بیٹا ایک انگریز کی سرپرستی میں دیدیا گیا تھا۔ ریاست کا دیوان یعنی وزیراعلیٰ ہندو …مزید پڑھیں

سیدنا مصلح موعودؓ اور تعلق باللہ

خلافت ثانیہ کی جوبلی کے موقع پر روزنامہ ’’الفضل‘‘ قادیان 28؍دسمبر 1939ء میں جو واقعات شائع ہوئے تھے ان میں سے بعض روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 27؍جنوری 1997ء میں مکرّر شائع ہوئے ہیں۔ ٭ حضرت چوہدری غلام حسین صاحب بیان کرتے ہیں کہ مَیں وثوق سے کہہ سکتا ہوں کہ ہمارے اکثر حالات جو ابھی سربستہ …مزید پڑھیں

حضرت مصلح موعودؓ کی قبولیت دعا کا اعجاز

قیام پاکستان کے بعد حضرت نواب عبداللہ خان صاحبؓ بطور ناظراعلیٰ خدمات سرانجام دے رہے تھے۔ حالات انتہائی کٹھن تھے جب 1948ء کی ایک صبح آپؓ پر دل کا ایسا شدید حملہ ہوا کہ ڈاکٹر زندگی سے ناامید ہو گئے۔ حضرت مصلح موعودؓ اور حضرت اماں جانؓ بہت رقت اور درد سے اللہ کے حضور …مزید پڑھیں

حضرت خلیفۃالمسیح الاوّل رضی اللہ عنہ

حضرت خلیفۃ المسیح الاول رضی اللہ عنہ کی خدمت میں ایک ہندو آیا جو دق کا مریض تھا۔ آپؓ نے اُس کو نسخہ دیا تو اُس نے عرض کیا کہ اُس کے پاس دوا خریدنے کے لئے پیسے نہیں ہیں۔ اس پر آپؓ نے اپنی جیب سے اُسے دوا منگوا کر دی اور فرمایا کہ …مزید پڑھیں

حضرت مصلح موعودؓ کی پاکیزہ خواہش

حضرت مصلح موعود رضی اللہ عنہ نے اگست 1937ء میں جماعت کے نام ایک پیغام میں فرمایا : ’’زندگیاں وقف کرنے والے ہمیشہ تم میں سے ہوتے رہیں اور ہر ایک اپنی جائیداد کے وقف کرنے کا عہد کرنے والا ہو۔ خلافت زندہ رہے اور اس کے گرد جان دینے کے لئے ہر مومن آمادہ …مزید پڑھیں

حضرت مصلح موعودؓ کی شفقت

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 6؍جنوری 1996ء میں محترم یحییٰ خانصاحب مرحوم کا ذکر کرتے ہوئے ان کی بیٹی رقمطراز ہیں کہ مرحوم حضرت مصلح موعود رضی اللہ عنہ کی خواہش کے احترام میں ملازمت ترک کرکے حضورؓ کے ذاتی عملہ میں شامل ہوئے اور تا وفات اس عہد کو نبھایا۔ 1940ء میں صرف 40 سال کی …مزید پڑھیں