اشک آنکھوں میں اپنی سجائے ہوئے – نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 19؍فروری 2009ء میں شامل اشاعت مکرم مبارک احمد صدیقی صاحب کے کلام سے انتخاب ہدیۂ قارئین ہے:

اشک آنکھوں میں اپنی سجائے ہوئے
دل دیا اِک دعا سے جلائے ہوئے
جذبۂ شکر سے سر جھکائے ہوئے
روح سجدے میں اپنی بچھاتے ہیں ہم
جشن ایسے بھی لوگو! مناتے ہیں ہم

مال و زر چیز کیا ہے وفا کے لئے
جان حاضر ہے میرِ سپاہ کے لئے
پھول کلیوں کی کوئی ضرورت نہیں
اس کی راہوں میں آنکھیں بچھاتے ہیں ہم
جشن ایسے بھی لوگو! مناتے ہیں ہم

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں

ur اردو
X