انتشارِ نور سے ہر سو چراغاں دیکھئے – نظم

ماہنامہ ’’اخبار احمدیہ‘‘ لندن فروری 2003ء کی زینت مکرم سید محمد الیاس ناصر دہلوی صاحب کی ایک غزل سے انتخاب پیش ہے:

انتشارِ نور سے ہر سو چراغاں دیکھئے
بہہ رہا ہے چشمۂ الطافِ یزداں دیکھئے
بے قراری جاں سپاری گہہ نہ پائے روز و شب
ہیں کٹھن کس درجہ منزل ہائے جاناں دیکھئے
سوزِ عصیاں سے ہوئی ہے خشک ناصرؔ چشم تر
کب خدا جانے کہ برسے ابر، فیضاں دیکھئے

50% LikesVS
50% Dislikes
0

اپنا تبصرہ بھیجیں