براعظم انٹارکٹیکا

(مطبوعہ ’’الفضل ڈائجسٹ‘‘، الفضل انٹرنیشنل لندن 16؍اپریل 2021ء)
ماہنامہ ’’خالد‘‘ ربوہ ستمبر 2012ء میں دنیا کے پانچویں براعظم انٹارکٹیکا کے تعارف میں لکھا ہے کہ یہ براعظم تین بڑے سمندروں بحرالکاہل، بحر ہند اور بحر اوقیانوس کے درمیان گھرا ہوا ہے۔ مجموعی طور پر ان پانیوں کو بحر منجمد جنوبی کہتے ہیں۔ دنیا میں سب سے زیادہ برف اسی براعظم میں پائی جاتی ہے اور قطب جنوبی اسی براعظم کے درمیان میں ہے۔ اس براعظم میں انسانی آبادی نہیں ہے اور اس علاقے کو صرف تجربات کے لیے مخصوص رکھا گیا ہے۔ معاہدات کی رُو سے انٹارکٹیکا میں کوئی ملک نہ کان کنی کرسکتا ہے اور نہ ہی معدنیات کی تلاش کرسکتا ہے۔ 1991ء میں پاکستانی سائنس دانوں نے بھی یہاں اپنا تحقیقی مرکز ’جناح اسٹیشن‘ قائم کیا تھا۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں

ur اردو
X