حضرت حکیم عبیداللہ بسمل صاحب رضی اللہ عنہ

حضرت حکیم مولانا عبیداللہ بسمل صاحب رضی اللہ عنہ حضرت مسیح موعود علیہ السلام کے صحابی اور بلند پایہ فارسی دان تھے۔ ان کی فارسی دانی میں کمال کی وجہ سے حضرت اقدسؑ نے انہیں ’’فردوسی ثانی‘‘ کا لقب عطا فرمایا تھا۔
حضرت خلیفۃالمسیح الاول رضی اللہ عنہ نے انہیں فارسی زبان کا بے نظیر عالم قرار دیا۔
ایران کے ملک الشعراء سنجر نے حضرت بسملؓ کے کلام کو دیکھ کر بے ساختہ کہا ’’خدا کی قسم اس نے مجھ سے بہتر کہا ہے‘‘۔
حضرت شیخ محمد احمد صاحب مظہر نے فارسی شاعری کے حوالہ سے آپؓ کو منفرد مقام پر فائز دکھایا ہے۔
آپؓ کے کلام کی نمایاں خصوصیت خود نمائی سے پاک ہونا ہے۔
آپؓ عربی میں بھی خوب شاعری فرماتے تھے۔ آپؓ کی تصانیف دس کے قریب ہیں جن میں سے بعض سکول اور یونیورسٹی کے نصاب کا بھی حصہ رہی ہیں۔
آپؓ کی وفات ستمبر 1938ء میں قریباً سو برس کی عمر میں ہوئی اور بہشتی مقبرہ قادیان میں تدفین ہوئی۔
مکرم مبشر احمد ایاز صاحب کے قلم سے حضرت عبیداللہ بسمل صاحبؓ کا ذکر خیر ماہنامہ ’’خالد‘‘ مارچ 1995ء کی زینت ہے۔

0
یہ مضمون شیئر کرنے کے لئے یہ چھوٹا لنک استعمال کریں۔ جزاک اللہ [https://khadimemasroor.uk/Mz8u2]

اپنا تبصرہ بھیجیں