زمین و آسماں بدلے ، رُخِ شمس و قمر بدلا – نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 31؍مارچ 2008ء میں مکرم عبدالسلام صاحب کا کلام شامل اشاعت ہے۔ اِس کلام میں سے انتخاب ہدیۂ قارئین ہے:

زمین و آسماں بدلے ، رُخِ شمس و قمر بدلا
ذرا اُٹھ دیکھ اے بندے! ستارۂ سحر بدلا
پیام امن عالمگیر لایا حضرت مہدی
سلام زندگانی میں فساد بحر و بر بدلا
کریں گے ہم جہاد نو سے تسخیر دلِ آدم
برنگ حجت و برہاں دم تیغ و تبر بدلا
یہی دیوانگی‘ فرزانگی پر آئے گی غالب
نہ وہ سنگ ستم بدلا نہ یہ شوریدہ سر بدلا
ہزاروں لالہ و گل ہیں کھلے پھر باغ ہستی میں
مسیحا کے نفس سے موجۂ باد سحر بدلا

0
یہ مضمون شیئر کرنے کے لئے یہ چھوٹا لنک استعمال کریں۔ جزاک اللہ [https://khadimemasroor.uk/w3uIc]

اپنا تبصرہ بھیجیں