محترم سیّد عبدالحی شاہ صاحب

(مطبوعہ الفضل ڈائجسٹ، الفضل انٹرنیشنل 11 ستمبر 2020ء)

ماہنامہ ’’انصاراللہ‘‘ ربوہ ستمبر واکتوبر 2012ء کا شمارہ مکرم سیّد عبدالحی شاہ صاحب مرحوم کی یاد میں خصوصی اشاعت کے طور پر شائع کیا گیا ہے۔
مکرم بشارت احمد ملک صاحب نے محترم سیّدعبدالحی شاہ صاحب کی انکساری کا ایک ایمان افروز واقعہ تحریر کیا ہے ۔ وہ رقمطراز ہیں کہ محترم شاہ صاحب میں نظام جماعت کی اطاعت کُوٹ کُوٹ کر بھری ہوئی تھی۔ جامعہ احمدیہ میں حصولِ تعلیم کے دوران میری ڈیوٹی ایک سال مجلس مشاورت کے موقع پر ایوان محمود کے دروازے پر اس ہدایت کے ساتھ لگائی گئی کہ خواہ کوئی ہو، اجازت نامہ دکھائے بغیر ہال میں داخل نہیں ہونا چاہیے۔جب محترم شاہ صاحب تشریف لائے تو خاکسار کے مطالبے پر آپ نے جیبیں ٹٹولنی شروع کیں اور کارڈ نہ پاکر فرمایا کہ لگتا ہے کہ مَیں گھر بھول آیا ہوں۔ آپ نے کسی جاننے والے کو گھر بھجوایا کہ فوراً جاکر میرا کارڈ لے آؤ اور خود دروازے کے ایک طرف کھڑے ہوکر انتظار کرنے لگے۔ دوسرے احباب آتے تو آپ کو کھڑا پاکر پوچھتے اور آپ جواب دیتے کہ کارڈ کا انتظار کر رہا ہوں۔ اُن میں سے بعض مجھے کہتے کہ یہ ناظر اشاعت ہیں، عمر رسیدہ اور کمزور ہیں، انہیں اندر آنے دیں کارڈ بھی آجائے گا۔ اس پر میرے جواب دینے سے قبل ہی آپ خود اُن صاحب کو فرماتے کہ نہیں نہیں کوئی بات نہیں، آپ اندر جائیں پریشان نہ ہوں، مَیں کارڈ آنے پر ہی اندر جاؤں گا آپ انہیں قانون توڑنے پر مجبور نہ کریں۔

0
یہ مضمون شیئر کرنے کے لئے یہ چھوٹا لنک استعمال کریں۔ جزاک اللہ [https://khadimemasroor.uk/WCY3D]

اپنا تبصرہ بھیجیں