وہ ذات نُور ہے ، اُس سے ہے کُل جہان کا نُور … نعت

(مطبوعہ ’’الفضل ڈائجسٹ‘‘، الفضل انٹرنیشنل لندن سیرۃالنبیﷺ نمبر 6؍اکتوبر 2022ء)

روزنامہ’’الفضل‘‘ربوہ 16؍دسمبر2013ء میں مکرمہ امۃالباری ناصر صاحبہ کا درج ذیل نعتیہ کلام شائع ہوا ہے:

وہ ذات نُور ہے ، اُس سے ہے کُل جہان کا نُور
زمیں کا ، چاند کا ، سورج کا ، آسمان کا نُور
کہاں نظر میں ہے طاقت کہ اُس کو دیکھ سکے
گمان و وہم سے بالا ہے اُس کی شان کا نُور
جب اُس نے چاہا کہ دکھلائے اپنا حُسن ہمیں
سمو دیا ہے محمدؐ میں اپنی جان کا نُور
ہر ایک حرف سے ظاہر ہے ذات والا صفات
قرآن پاک ہے رحمان کے بیان کا نُور
جہاں بھی حق و صداقت کے پھول روشن ہیں
روش روش پہ نمایاں ہے باغبان کا نُور
خدایا دل میں بسے صرف تیری ذات کا عشق
جھلکنے ہم سے لگے شاہِ دوجہانؐ کا نُور

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں

ur اردو
X