کیا کیا مَیں لکھوں کیا کیا تھی میری ماں – نظم

جماعت احمدیہ امریکہ کے ماہنامہ ’’النور‘‘ مئی و جون 2011ء میں مکرم عبدالسلام جمیل صاحب کی اپنی والدہ مرحومہ کی یاد میں کہی گئی ایک نظم شائع ہوئی ہے۔ اس نظم میں سے انتخاب ہدیۂ قارئین ہے:

کیا کیا مَیں لکھوں کیا کیا تھی میری ماں
توحید کا پَرتَو تھی یکتا تھی میری ماں
مجھے احساس ہوا نہ کوئی تشنہ لبی کا
ساحل تھی میری پیاس تو دریا تھی میری ماں
آیا نہ کبھی لب پہ کوئی حرفِ شکایت
ہر حال میں راضی بہ رضا تھی میری ماں
سیلِ حوادث میں اِک گوہِ گراں تھی
پیار کے گلشن میں صبا تھی میری ماں
جتنا بھی کروں شکرِ خدا اتنا ہی کم ہے
اس کی مجھے سب سے حسیں عطا تھی میری ماں

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں

ur اردو
X