کیسا خوف و ہراس ہے لوگو – نظم

(مطبوعہ الفضل ڈائجسٹ 11 اکتوبر 2019ء)

ماہنامہ ’’خالد‘‘ ربوہ جنوری 2011ء میں مکرم بابرعطا صاحب کی ایک غزل شامل اشاعت ہے۔ اس میں سے انتخاب پیش ہے:

کیسا خوف و ہراس ہے لوگو
شہر کیوں بدحواس ہے لوگو
یہ زمیں کب سے پی رہی ہے لہو
کیا عجب اس کی پیاس ہے لوگو
اک دلِ درد مند رکھتا ہوں
اور کیا میرے پاس ہے لوگو
سارے رشتے وہ پَل میں توڑ گیا
پھر بھی ملنے کی آس ہے لوگو

0
یہ مضمون شیئر کرنے کے لئے یہ چھوٹا لنک استعمال کریں۔ جزاک اللہ [https://khadimemasroor.uk/GxeqA]

اپنا تبصرہ بھیجیں