کیوں ہمیں ’’الفضل‘‘ سے اتنی محبت ہو گئی – نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 18جون 2011ء میں محترم حافظ سخاوت علی صاحب شاہجہانپوری کی ایک نظم ایک پرانے شمارہ سے منقول ہے۔ اس نظم میں سے انتخاب ملاحظہ فرمائیں :

کیوں ہمیں ’’الفضل‘‘ سے اتنی محبت ہو گئی
کیا نہاں اس میں کسی دلبر کی صورت ہو گئی
جب یہ آیا سامنے ایمان تازہ ہو گیا
روح کو فرحت ملی دل کو مسرّت ہو گئی
کفر کو اور شرک کو پامال اس نے کر دیا
منہدم کفّار کی ساری عمارت ہو گئی
دوست اس کی قدر سمجھیں اس کو منگوائیں ضرور
حیف ہے صد حیف ہے ، جو پست ہمّت ہو گئی

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں

ur اردو
X