گولہ پھینکنا

(مطبوعہ الفضل ڈائجسٹ، الفضل انٹرنیشنل 31 جولائی 2020ء)

گولہ پھینکنے کے کھیل کی ابتدا سترہویں صدی میں آئرلینڈ میں گول پتھر پھینکنے کے مقابلوں سے ہوئی۔ ماہنامہ ’’تشحیذالاذہان‘‘ ربوہ فروری 2011ء میں عزیزم سلطان نصیر کے مضمون میں اس حوالے سے چند معلومات پیش کی گئی ہیں۔
مَردوں کے لیے گولے کا وزن 16پاؤنڈ اور عورتوں کے لیے 8.82 پاؤنڈ ہوتا ہے۔ گولہ سات فٹ قطر کے دائرہ سے پھینکا جاتا ہے۔ دائرے کے اُس طرف جہاں گولہ پھینکنا ہوتا ہے ایک قوس نما لکڑی کا بورڈ ہوتا ہے جسے سٹاپ بورڈ کہتے ہیں۔ گولہ ایک ہاتھ کی انگلیوں پر رکھ کر اسے ہنسلی کی ہڈی کے ساتھ رکھتے ہوئے کندھے سے آگے کی طرف پھینکا جاتا ہے۔ گولہ پھینکتے وقت ہاتھ کو کندھے سے نیچے یا پیچھے کی طرف لے جانا خلافِ قانون ہے۔ تاہم کھلاڑی اضافی طاقت حاصل کرنے کے لیے دائرہ کے اندر گھومتے ہوئے، جمپ لے کر یا گلائیڈ کرتے ہوئے کسی بھی طریقے سے گولہ پھینک سکتا ہے۔ گولہ پھینکنے کے بعد کھلاڑی اُسی وقت دائرے کو چھوڑ سکتا ہے جب گولہ زمین پر گِر جائے۔ گولہ پھینکتے وقت دستانے استعمال نہیں کیے جاسکتے لیکن گولہ پر بہتر گرفت کے لیے ہاتھوں پر پاؤڈر لگایا جاسکتا ہے۔

0
یہ مضمون شیئر کرنے کے لئے یہ چھوٹا لنک استعمال کریں۔ جزاک اللہ [https://khadimemasroor.uk/3HDvE]

اپنا تبصرہ بھیجیں