یہ کس کی جدائی پہ زمیں کانپ اٹھی ہے – نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 29؍مئی 2003ء میں شامل اشاعت مکرمہ طیبہ رضوان صاحبہ کی ایک نظم سے انتخاب ہدیۂ قارئین ہے:

یہ کس کی جدائی پہ زمیں کانپ اٹھی ہے
وہ مرد خدا ، مرد خدا ، مرد خدا ہے
اب تُو ہی بتا کیسے سہیں درد جدائی
یہ غم تیری فرقت کا تو ہر غم سے سوا ہے
اللہ نے ہے خوف کو پھر امن سے بدلا
مسرورؔ ہے بخشا ہمیں مسرور کیا ہے

50% LikesVS
50% Dislikes
0

اپنا تبصرہ بھیجیں