الوداع اے سالِ رفتہ الوداع دورِ زبوں – نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ15جنوری 2008ء میں مکرم مبشر احمد محمود صاحب کا کلام شامل اشاعت ہے۔ اِس کلام میں سے انتخاب ہدیۂ قارئین ہے۔

الوداع اے سالِ رفتہ الوداع دورِ زبوں
تو نے بخشے رنج کتنے کس طرح کس سے کہوں
روز و شب جور و جفا اور درد و غم صبح و مسا
خود رہے دامن دریدہ کچھ نہیں شکوہ کی جا
خود فراموشی پہ جب بھی ہوش نے سایہ کیا
پھر بہ طرزِ نو فریبِ حسن نے بھٹکا دیا
خیر احساسِ زیاں گر ہے تو کوئی غم نہیں
داستاں کہنے سے حاصل آنکھ ہی گر نم نہیں؟
اے خدا ایسا نہ ہو اگلے برس پھر یہ کہوں
الوداع اے سالِ رفتہ الوداع دورِ زبوں

0
یہ مضمون شیئر کرنے کے لئے یہ چھوٹا لنک استعمال کریں۔ جزاک اللہ [https://khadimemasroor.uk/9cHdx]

اپنا تبصرہ بھیجیں