ان کے گھر وصل کے مہتاب نہیں آتے ہیں

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 7؍جون 2000ء کی اشاعت میں شامل مکرم عبدالکریم قدسی صاحب کی ایک غزل سے چند اشعار ملاحظہ فرمائیں:-

ان کے گھر وصل کے مہتاب نہیں آتے ہیں
وہ جنہیں ہجر کے آداب نہیں آتے ہیں
تجھ کو جانا ہے دل و جان کا مالک جاناں
اس سے زیادہ ہمیں القاب نہیں آتے ہیں
آنکھ کی بستی وہ بستی ہے جہاں پر قدسیؔ
بارشیں ہوتی ہیں، سیلاب نہیں آتے ہیں

50% LikesVS
50% Dislikes
0

اپنا تبصرہ بھیجیں