جانوں کا نذرانہ دیں گے لہو کے دیپ جلائیں گے

روزنامہ ’’الفضل‘‘17؍اپریل 1995ء میں شائع شدہ مکرم اکرم محمود صاحب کی ایک نظم سے دو اشعار ملاحظہ فرمائیں:

جانوں کا نذرانہ دیں گے لہو کے دیپ جلائیں گے
تیری راہ پہ چلنے والے کب تک پتھر کھائیں گے
جانے والے! تو ہے تسلسل ایک قدیم روایت کا
تیرے پیچھے آنے والے دیپ سے دیپ جلائیں گے
50% LikesVS
50% Dislikes
0

اپنا تبصرہ بھیجیں