بے کیف گلستاں میں بادِ بہار ہے – نظم

جماعت احمدیہ امریکہ کے ماہنامہ ’’النور‘‘ جولائی،اگست 2007ء میں شائع ہونے والی محترم چودھری شبیر احمد صاحب کی ایک نظم سے انتخاب ہدیۂ قارئین ہے:

بے کیف گلستاں میں بادِ بہار ہے
خاموش عندلیب ہے گل بے قرار ہے
اے باغبان سارا چمن دلفگار ہے
اَب آ بھی جائیے کہ ہمیں انتظار ہے
ربوہ کے ذرّے ذرّے کو دیدار کی طلب
تیرے فدائیوں کو تیرے پیار کی طلب
سرمایۂ حیات یہی تیرا پیار ہے
اَب آ بھی جائیے کہ ہمیں انتظار ہے

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں

ur اردو
X