لکھتی رہوں ، لکھتی رہوں ، تب بھی نہ عیاں ہوں – نظم

روزنامہ ’’الفضل ‘‘ربوہ 10؍اکتوبر 2009ء میں شامل اشاعت مکرمہ ڈاکٹر فہمیدہ منیر صاحبہ کے کلام سے انتخاب ذیل میں ہدیۂ قارئین ہے:

لکھتی رہوں ، لکھتی رہوں ، تب بھی نہ عیاں ہوں
سو سال لکھوں تب بھی فضائل نہ بیاں ہوں
قرآن سمندر ہے خزانوں سے بھرا اِک
اس دنیا کے ماتھے پہ نگینہ ہے جڑا اِک
اس دل کی سمجھ لیجئے کیا آن ہے کیا بان
جس دل کے نہاں خانوں میں مہمان ہے قرآن
شوکت بھرااِک ساز ہے سامان ہے قرآن
میرے لئے ہیروں سے بھری کان ہے قرآن

0
یہ مضمون شیئر کرنے کے لئے یہ چھوٹا لنک استعمال کریں۔ جزاک اللہ [https://khadimemasroor.uk/Qxf37]

اپنا تبصرہ بھیجیں