چل رہی ہے ریل سی میری نظر کے سامنے

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 13؍جنوری 2001ء میں شامل اشاعت مکرمہ صاحبزادی امۃالقدوس صاحبہ کی ایک نظم ’’یاد رفتگان‘‘ سے چند اشعار ہدیہ قارئین ہیں:

چل رہی ہے ریل سی میری نظر کے سامنے
رفتگاں کی بھیڑ ہے یادوں کے گھر کے سامنے
ذہن میں میرے چمکتے ہیں وہ چہرے آج بھی
ماند نہ ہوتے تھے جو شمس و قمر کے سامنے
جوہری کی سی پرکھ، لعلِ بدخشاں کی سی آب
مثلِ کوہِ نور تھے لعل و گہر کے سامنے
ہستیٔ موہوم پہ کوئی بھروسہ کیا کرے
ہست کا انجام ہے ہر دیدہ ور کے سامنے

0
یہ مضمون شیئر کرنے کے لئے یہ چھوٹا لنک استعمال کریں۔ جزاک اللہ [https://khadimemasroor.uk/NGFhO]

اپنا تبصرہ بھیجیں