کیا دل کا دھڑکنا ہے، یہ کیا رشتۂ جاں ہے – نظم بیاد ثاقب زیروی

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 13؍ستمبر 2002ء میں شامل اشاعت مکرم عبدالمنان ناہید صاحب کی نظم بعنوان ’’ثاقب زیروی‘‘ سے انتخاب پیش ہے:

کیا دل کا دھڑکنا ہے، یہ کیا رشتۂ جاں ہے
شائد یہ جہاں کارگہِ شیشہ گراں ہے
اک درد کی لہر ایسی اٹھی بزم سخن میں
دلگیر بہت قافلۂ ہم سخناں ہے
اب کون جگائے گا تری آواز کا جادو
افسردہ بہت محفلِ آشفتہ سراں ہے

0
یہ مضمون شیئر کرنے کے لئے یہ چھوٹا لنک استعمال کریں۔ جزاک اللہ [https://khadimemasroor.uk/xTk6Y]

اپنا تبصرہ بھیجیں