اک درد تھا کہ جس کا مداوا نہ ہوسکا – نظم

ماہنامہ ’’مصباح‘‘ ربوہ کے ’’سیدنا طاہر نمبر‘‘ میں شامل اشاعت مکرمہ فرح جبیں صاحبہ کی ایک نظم سے انتخاب ملاحظہ فرمائیں:

اک درد تھا کہ جس کا مداوا نہ ہوسکا
اک غم تھا جس کا کوئی بھی چارا نہ ہوسکا
اک زُعم سے رواں تھے امیدوں کے قافلے
ان کو نئے سفر کا اشارہ نہ ہوسکا
ہر لمحہ دوریوں سے طبیعت تھی مضمحل
اس پر یہ فاصلہ تو گوارا نہ ہوسکا
اے پاکباز شاہِ خلافت! وفا شعار!
اے عاشقِ رسولؐ! دل و جاں ترے نثار

50% LikesVS
50% Dislikes
0

اپنا تبصرہ بھیجیں