جن خیالوں میں بسی ہے تری زلفوں کی مہک

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 4؍مئی 1995ء کی زینت مکرم ثاقب زیروی صاحب کے کلام سے تین اشعار ہدیہ قارئین ہیں:

جن خیالوں میں بسی ہے تری زلفوں کی مہک
ان خیالوں کو پریشان نہ ہونے دیں گے
ہر حسیں شکل میں تسکین کے پہلو ڈھونڈے
دل کو ہم اتنا بھی نادان نہ ہونے دیں گے
ڈوب جائے نہ کہیں اہل وفا کی توقیر
قطرہ اشک کو طوفان نہ ہونے دیں گے
50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں