مجھے رستہ دکھانے کو ستارہ دُور تک پہنچا – نظم

ماہنامہ ’’النور‘‘ امریکہ مئی 2010ء میں خلافت سے متعلق شائع ہونے والی مکرم احمد مبارک صاحب کی ایک نظم سے انتخاب پیش ہے:

مجھے رستہ دکھانے کو ستارہ دُور تک پہنچا
کہیں بھٹکا نہیں آخر دَرِ مسرور تک پہنچا
رُخِ انور کو تکنے طالب و مطلوب سب پہنچے
ہجومِ عاشقاں پہنچا ، بُتِ مغرور تک پہنچا
مئے عرفان تازہ چل رہی تھی اس کی مجلس میں
پیالہ در پیالہ مجھ دلِ مخمور تک پہنچا
زمانہ چل رہا ہے کس قدر بے سمت و بے منزل
میرے مالک تُو اس کو وقت کے مامور تک پہنچا

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں

ur اردو
X