موسموں کے ساتھ ہی بدلیں رسومِ گلستاں – نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 22 جنوری 2011ء میں مکرم راجہ محمد یوسف خان صاحب کی ایک غزل شامل اشاعت ہے۔ اس غزل کے چند اشعار پیش ہیں:

موسموں کے ساتھ ہی بدلیں رسومِ گلستاں
بجلیوں کی زَد میں آیا پھر مرا ہی آشیاں
چند کم ظرفوں کی خاطر رونقِ محفل گئی
وہ گُھٹن طاری ہوئی کہ الحفیظ و الاماں
سامنے آئی تو اک عالَم کو حیراں کر گئی
داستانِ عشق میں چھوٹی سی میری داستاں
اپنے مقصد میں ہوئے وہ کامیاب و کامراں
جان دے کر پا گئے ہیں جو حیاتِ جاوداں
یہ خُوئے صبر و رضا ہے دشتِ فرقت کی عطا
آپ کے یوسفؔ بھی ورنہ تھے کبھی شعلہ بیاں

0
یہ مضمون شیئر کرنے کے لئے یہ چھوٹا لنک استعمال کریں۔ جزاک اللہ [https://khadimemasroor.uk/Drw71]

اپنا تبصرہ بھیجیں