میرا اپنا نہیں کوئی تیرے سوا، تجھ سے نہ کہوں تو کس سے کہوں … نظم

(مطبوعہ ’’الفضل ڈائجسٹ‘‘، الفضل انٹرنیشنل لندن 13؍جنوری 2023ء)
روزنامہ’’الفضل‘‘ربوہ یکم دسمبر 2014ء میں مکرمہ امۃالباری ناصر صاحبہ کا کلام شامل اشاعت ہے۔ اس کلام میں سے انتخاب ملاحظہ فرمائیں:

میرا اپنا نہیں کوئی تیرے سوا، تجھ سے نہ کہوں تو کس سے کہوں
تجھ سے تو نہیں مرا حال چھپا،تجھ سے نہ کہوں تو کس سے کہوں
دلدل ہے گناہوں کی گہری، ٹکتے نہیں میرے پاؤں کہیں
تُو زور سے تھام لے ہاتھ مرا، تجھ سے نہ کہوں تو کس سے کہوں
وہ کام کرالے تُو مجھ سے جس میں ہو شامل تیری رضا
نہ لینا حساب کتاب مرا تجھ سے نہ کہوں توکس سے کہوں
دشمن کو حسدنے اندھا کیا کرتے ہیں جفا بےخوفِ خدا
دل کرچی کرچی ٹوٹ گیا تجھ سے نہ کہوں تو کس سے کہوں
ظلمت کی اندھی راہوں میں نفرت کی ظالم بانہوں میں
اب ہوگیا بالکل حال تبہ تجھ سے نہ کہوں تو کس سے کہوں
ترا نام غفور ہے پیارے خدا بخشش میں تجھے آتا ہے مزا
رکھ لینا غریب کا پاسِ حیا تجھ سے نہ کہوں تو کس سے کہوں
رو رو کر عرض یہ کرتی ہوں میں تجھ سے محبت کرتی ہوں
مجھ سے نہ کبھی بھی ہونا خفا تجھ سے نہ کہوں تو کس سے کہوں

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں

ur اردو
X