ہم مصطفی ؐ کی رہ میں آنکھیں بچھا رہے ہیں – نظم

ماہنامہ ’’انصاراللہ‘‘ ربوہ اگست 2012ء میں مکرم عبدالسلام اسلام صاحب کی ایک نظم بعنوان ’’نالۂ جدید‘‘ شائع ہوئی ہے جس میں سے انتخاب ہدیۂ قارئین ہے:

ہم مصطفی ؐ کی رہ میں آنکھیں بچھا رہے ہیں
کیوں ہم کو زُہد والے آنکھیں دکھا رہے ہیں
پُرخار کس قدر ہے عشق و وفا کا رستہ
دل کو مگر ہے تسکیں وہ آزما رہے ہیں
زخموں پہ زخم دے کر بپھرے ہوئے وہ پھر بھی
زخموں پہ زخم کھاکر ہم مسکرا رہے ہیں
عرشِ بریں کی جانب پرواز ہے ہماری
رکھ کر جبیں زمیں پر ہم اُڑتے جا رہے ہیں
تائید میں ہیں اُن کی تقدیر کے ستارے
مہدی کی اقتدا میں جو سر کو جھکا رہے ہیں
نہ ہاتھ میں ہے جُنبش نہ اِذنِ لب کشائی
اپنی جبیں سے اُس کا در کھٹکھٹا رہے ہیں

0
یہ مضمون شیئر کرنے کے لئے یہ چھوٹا لنک استعمال کریں۔ جزاک اللہ [https://khadimemasroor.uk/NeVUa]

اپنا تبصرہ بھیجیں