حضرت صاحبزادہ مرزا سلطان احمد صاحب

حضرت صاحبزادہ مرزا سلطان احمد صاحب سیدنا حضرت اقدس مسیح موعود علیہ السلام کے حرم اول سے بڑے صاحبزادے تھے۔ 1852ء میں پیدا ہوئے۔ ابتدائی تعلیم کے بعد دہلی چلے گئے، کچھ عرصہ دیوبند میں بھی بسلسلہ تعلیم مقیم رہے پھر سرکاری ملازمت شروع کی اور ترقی کرتے کرتے اکسٹرا اسسٹنٹ کمشنر اور پھر افسر …مزید پڑھیں

حضرت قریشی محمد شفیع صاحب رضی اللہ عنہ

حضرت خلیفۃالمسیح الاولؓ فرماتے ہیں کہ میری ایک بہن کا بیٹا پیچش میں مبتلا ہوکر مرگیا۔ چند روز بعد میں گیا اور میرے سے انہوں نے کسی مریض کو اچھا ہوتے دیکھا تو فرمایا بھائی اگر تم آجاتے تو میرا لڑکا بچ جاتا۔ میں نے کہا تمہارے ایک لڑکا ہو گا اور میرے سامنے پیچش …مزید پڑھیں

حضرت عالم بی بی صاحبہ رضی اللہ عنہا

حضرت عالم بی بی صاحبہؓ کے آباء واجدادبھی خاندان مغلیہ کے ساتھ ہی قادیان وارد ہوئے تھے۔ آپؓ حضرت مسیح موعودؑکی بعثت سے قبل ہی بیوہ ہو چکی تھیں۔ آپؓ کی وفات یکم مئی1926ء کو65سال کی عمر میں ہوئی اوربوجہ موصی ہونے کے بہشتی مقبرہ میں تدفین ہوئی۔ آپؓ کے پوتے محترم محمد عبداللہ قریشی …مزید پڑھیں

حضرت سردارعبدالرحمٰن صاحب رضی اللہ عنہ

حضرت سردار عبدالرحمٰن صاحبؓ (سابق مہر سنگھ) 1872ء میں جالندھر کے ایک گاؤں میں سکھ گھرانہ میں پیدا ہوئے۔ بارہ سال کی عمر میں تلاش حق کیلئے تنہا گھر سے نکل کھڑے ہوئے اور مختلف لوگوں سے ملتے ملاتے حضرت مولوی خدابخش صاحبؓ جالندھری کے پاس پہنچے جو 1889ء میں حضرت مسیح موعود علیہ السلام …مزید پڑھیں

حضرت راجہ پائندے خان صاحب رضی اللہ عنہ

داراپور جہلم کے رئیس اعظم اور جاگیردار حضرت راجہ پائندے خان صاحبؓ کو حضرت مولوی برہان الدین صاحبؓ جہلمی سے دیرینہ عقیدت تھی۔ چنانچہ جب حضرت مولوی صاحبؓ نے حضرت مسیح موعودؑ کی بیعت کی سعادت پائی تو حضرت راجہ صاحبؓ بھی احمدی ہوگئے۔ حضرت مسیح موعودؑ جب جہلم تشریف لے گئے تو حضرت اقدسؑ …مزید پڑھیں

حضرت زینب بی بی صاحبہ رضی اللہ عنہا

حضرت زینب بی بی صاحبہ کی وفات جون 1976ء میں 90 برس کی عمر میں ہوئی۔ آپ کی مالی قربانیوں کے بارہ میں روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 23؍نومبر 1996ء میں ’’تاریخ لجنہ‘‘ سے منقول ہے کہ جب آپؓ لجنہ فیروزپور کی صدر تھیں تو حضرت مصلح موعودؓنے تحریک کی کہ ہرشہرکی لجنہ ایک دیگ کی قیمت …مزید پڑھیں

حضرت سیٹھ عبدالرحمٰن صاحب رضی اللہ عنہ

حضرت سیٹھ عبدالرحمٰن صاحبؓ مدراس کے ایک مشہور تاجر خاندان کے چشم وچراغ تھے جنہیں حضرت مسیح موعود علیہ السلام کی کتاب ’’فتح اسلام‘‘ کے ذریعہ حضورؑ کے دعویٰ کا علم ہوا۔ چنانچہ آپؓ حضرت مولوی حسن علی صاحب بھاگلپوریؓ کی رفاقت میں عازم قادیان ہوئے اور11؍جنوری1894ء کو بیعت کی سعادت پائی۔ حضرت مسیح موعودؑ …مزید پڑھیں

حضرت منشی زین العابدین صاحب رضی اللہ عنہ

حضرت منشی زین العابدین صاحبؓ اندازاً1872ء میں پیدا ہوئے۔ آپؓ حضرت مسیح موعودؑ کے خادم خاص حضرت حافظ حامد علی صاحبؓ کے برادراصغر تھے اور حضورؑکے دعویٰ سے قبل ہی حضور علیہ السلام کی ملاقات کا شرف پاتے آرہے تھے۔ حضورؑآپ کے گاؤں میں آپ کے گھر بھی تشریف لے جاچکے تھے۔ جب آپؓ کی …مزید پڑھیں

حضرت چوہدری امیر محمد خان صاحب رضی اللہ عنہ

حضرت چوہدری امیر محمد خان صاحبؓ کو 1901ء میں حضرت مسیح موعودؑ پر ایمان لانے کی سعادت حاصل ہوئی۔ آپ ہوشیارپور کے رہنے والے تھے۔ تقسیم ملک کے بعد چوڑیاں کلاں ضلع سیالکوٹ میں آکر آباد ہو گئے اور یہیں 2؍مارچ 1951ء کو وفات پائی اور بہشتی مقبرہ ربوہ میں تدفین عمل میں آئی۔ حضرت …مزید پڑھیں

حضرت مولوی فتح علی صاحب رضی اللہ عنہ

حضرت مولوی فتح علی صاحبؓ آف دولمیال (ضلع چکوال) دیگر دو افراد کے ہمراہ پہلی بار قادیان کیلئے تشریف لے گئے اور کئی رکاوٹوں کے بعد وہاں پہنچ پائے۔ آپؓ بیان فرماتے ہیں کہ حضرت مسیح موعود علیہ السلام کے چہرہ مبارک سے نظر ہٹتی ہی نہیں تھی اور حضورؑ کے ارشادات سننے کیلئے ہم …مزید پڑھیں

حضرت چوہدری عبدالسلام خان صاحب رضی اللہ عنہ

حضرت چوہدری عبدالسلام خان صاحبؓ پشاور میں پیدا ہوئے۔ پرائمری کے بعد مزید تعلیم کیلئے لاہور آگئے۔ جہاں احمدیت کے بارہ میں کچھ لٹریچر پڑھنے کا موقعہ ملا۔ میٹرک میں زیر تعلیم تھے جب حضرت اقدس مسیح موعودؑ لاہور تشریف لائے اور آپؓ کو ملاقات کا موقعہ ملا۔ کچھ عرصہ بعد غالباً 1903ء میں قادیان …مزید پڑھیں

حضرت میاں الہ دین صاحب بھیروی رضی اللہ عنہ

حضرت میاں الہ دین صاحب بھیرویؓ 1852ء میں پیدا ہوئے۔ آپؓ اہل حدیث تھے۔ بہت عابد اور تہجد گزار تھے۔ حضرت حکیم مولانا نورالدین صاحبؓ کے ہمسایہ و معتقد تھے۔ روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 15؍اکتوبر 1996ء میں آپؓ کے پڑپوتے محترم محمود مجیب اصغر صاحب نے آپؓ کا ذکرخیر کیا ہے۔ 1898ء میں آپ کے صاحبزادے …مزید پڑھیں

حضرت مولوی محمد دلپذیر صاحب بھیروی رضی اللہ عنہ

حضرت مولوی محمد دلپذیر صاحبؓ بھیروی پنجابی کے مشہور شاعر اور علمی شخصیت تھے۔ 1865ء میں آپ کی پیدائش ہوئی اور 1894ء میں بیعت کی توفیق پائی۔ 1945ء میں آپؓ وفات پاگئے۔ آپؓ کا ذکر خیر محترم محمودمجیب اصغر صاحب کے قلم سے روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 14؍اکتوبر میں شامل اشاعت ہے۔ قبول احمدیت سے قبل …مزید پڑھیں

حضرت مخدوم محمد صدیق صاحب بھیروی رضی اللہ عنہ

حضرت مخدوم محمد صدیق صاحب بھیرویؓ کا حضرت حکیم مولانا نورالدین صاحبؓ سے قریبی تعلق تھا اور یہی تعلق آپؓ کو حضرت مسیح موعودؑ کے دامن سے وابستہ کرنے کا موجب بنا۔ آپؓ 1866ء میں پیدا ہوئے۔ 1891ء میں بیعت کی سعادت حاصل کی اور 1925ء میں 59سال کی عمر میں وفات پائی۔ آپؓ کا …مزید پڑھیں

حضرت سیدہ مریم بیگم صاحبہ رضی اللہ عنہا

حضرت صاحبزادہ مرزا طاہر احمد صاحب ایدہ اللہ تعالیٰ نے اپنی والدہ ماجدہ کی سیرت کے بارہ میں جو مضمون رقم فرمایا تھا اس کا ایک اقتباس ’’خدمت خلق‘‘ کے عنوان سے روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 12؍اکتوبر 1996ء کی زینت ہے۔ حضور ایدہ اللہ نے متعدد واقعات بیان فرمائے ہیں جن سے حضرت سیدہ مریم بیگم …مزید پڑھیں

حضرت صاحبزادہ پیر محمد سراج الحق نعمانی رضی اللہ عنہ

حضرت صاحبزادہ پیر محمد سراج الحق نعمانیؓ کا تعلق سرسادہ ضلع سہارنپور سے تھا اور آپ کا خاندان نسل در نسل گدی نشین چلا آرہا تھا۔ آپ کے والد نے پہلے آپ کا نام نصیرالدین رکھا اور پھر بدل دیا۔ آپؓ کے والد بچپن میں ہی آپ کو اپنے ہمراہ جنگلوں میں لے جاتے اور …مزید پڑھیں

حضرت مولوی عبدالعزیز صاحب سہارنپوری رضی اللہ عنہ

حضرت مولوی عبدالعزیز صاحبؓ سہارنپوری نے 1900ء میں حضرت مسیح موعودؑ کے دست مبارک پر بیعت کی سعادت حاصل کی۔ 1905ء میں جب حضرت اقدسؑ دہلی تشریف لے گئے تو حضرت مولوی صاحبؓ ملاقات کے لئے سہارنپور سے وہاں تشریف لے گئے۔ حضرت مصلح موعودؓ نے جب بعض احباب کے ہمراہ ہندوستان کی مختلف دینی …مزید پڑھیں

حضرت میر ناصر نواب صاحب رضی اللہ عنہ

حضرت میر ناصر نواب صاحبؓ 1845ء یا 1846ء میں پیدا ہوئے۔ آپ کے والد محترم خواجہ ناصر امیر صاحب خواجہ میر دردؒ کے گدی نشین تھے۔ ابھی آپ بچے ہی تھے کہ آپ کے والد صاحب وفات پا گئے اور دو سال بعد غدر میں آپ کے سارے کنبہ کو دلّی سے نکلنا پڑا۔ آپ …مزید پڑھیں

حضرت حکیم فضل دین صاحب رضی اللہ عنہ

بھیرہ کو تاریخ احمدیت میں اہم حیثیت حاصل ہے کیونکہ 313؍صحابہ کرام میں سے 7فیصد کا تعلق بھیرہ سے ہے جن میں حضرت مولانا نورالدین صاحبؓ کی ذات گرامی بھی شامل ہے۔ حضرت مصلح موعودؓ نے 1950ء میں یہاں کا دورہ فرمایا تھا۔ حضرت مسیح موعود علیہ السلام کے ایک بزرگ صحابی حضرت حکیم فضل …مزید پڑھیں

حضرت حافظ نبی بخش صاحب رضی اللہ عنہ

حضرت حافظ نبی بخش صاحبؓ کے حالات زندگی کا ایک حصہ روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 30؍اکتوبر 1996ء میں شامل اشاعت ہے۔ حضرت حافظ صاحبؓ بیان کرتے ہیں کہ ایک دفعہ مَیں کمزوری نظر کی شکایت لے کر حضرت حکیم نورالدین صاحبؓ کی خدمت میں علاج کیلئے حاضر ہوا تو آپؓ نے فرمایا شاید موتیا اُترے گا۔ …مزید پڑھیں

حضرت حکیم فضل الرحمان صاحب رضی اللہ عنہ

حضرت مصلح موعودؓ کے ارشاد پر مغربی افریقہ میں پہلا احمدیہ مرکز 28 ؍فروری 1921ء کو حضرت مولانا عبدالرحیم صاحب نیرؓ نے انگلستان سے سالٹ پانڈ (غانا) پہنچ کر قائم فرمایا۔ 18؍ مارچ 1921ء کو فینٹی قوم کے چیف نے ہزاروں افراد کے ہمراہ احمدیت قبول کرلی۔ 18؍ اپریل کو آپؓ نے لیگوس (نائیجیریا) میں …مزید پڑھیں

حضرت مولوی قدرت اللہ سنوری صاحب رضی اللہ عنہ

حضرت مولوی قدرت اللہ سنوری صاحبؓ 1882ء میں سنور (ریاست پٹیالہ) میں حضرت محمد موسیٰ صاحب کے ہاں پیدا ہوئے۔ نقشہ نویسی کی تعلیم حاصل کی اور پٹیالہ میں ملازم رہے۔ 1915ء میں حضرت مصلح موعود کے ارشاد پر 26؍صحابہ کرام کی غیرمطبوعہ روایات آپؓ نے کتابی شکل میں شائع کیں۔ ایک کتاب ’’تجلی قدرت‘‘ …مزید پڑھیں

حضرت چودھری سر محمد ظفر اللہ خانصاحب رضی اللہ عنہ

حضرت چودھری سر محمد ظفر اللہ خانصاحبؓ کی پاکیزہ سیرت کے چند واقعات ماہنامہ ’’تشحیذالاذہان‘‘ اگست 1996ء میں محترم شمشاد احمد صاحب قمر نے بیان کئے ہیں جنہیں آپؓ کی علالت کے دوران تین ماہ کے لئے آپؓ کی خدمت کی سعادت نصیب ہوئی۔ وہ لکھتے ہیں کہ حضرت چودھری صاحب کو نماز کی بہت …مزید پڑھیں

حضرت صاحبزادہ مرزا بشیر احمد صاحب رضی اللہ عنہ

حضرت صاحبزادہ مرزا بشیر احمد صاحب ابھی چھوٹے بچے ہی تھے اور گھر میں کھیل رہے تھے کہ حضرت اقدس مسیح موعود علیہ السلام نے حضرت اماں جانؓ کو مخاطب کر کے فرمایا کہ اسے ایم۔ اے کروانا۔ 19 سالہ حضرت مرزا بشیر احمد صاحب 1912ء میں گورنمنٹ کالج لاہور میں بی۔ اے کے ہونہار …مزید پڑھیں

حضرت حافظ نور محمد صاحب رضی اللہ عنہ

حضرت حافظ نور محمد صاحبؓ سکنہ فیض اللہ چک ان اصحاب میں سے تھے جنہیں دعویٰ سے قبل ہی حضرت مسیح موعود علیہ السلام کی صحبت میسر رہی۔ آپؓ نماز تہجد کے لئے بیدار ہونے کی خاطر حضورؑ کے کمرہ میں سویا کرتے اور سیر پر بھی حضورؓ کے ہمراہ جاتے تھے۔ حضورؑ نے بعض …مزید پڑھیں